×
العربية english francais русский Deutsch فارسى اندونيسي اردو

خدا کی سلام، رحمت اور برکتیں.

پیارے اراکین! آج فتوے حاصل کرنے کے قورم مکمل ہو چکا ہے.

کل، خدا تعجب، 6 بجے، نئے فتوے موصول ہوں گے.

آپ فاٹاوا سیکشن تلاش کرسکتے ہیں جو آپ جواب دینا چاہتے ہیں یا براہ راست رابطہ کریں

شیخ ڈاکٹر خالد الاسلام پر اس نمبر پر 00966505147004

10 بجے سے 1 بجے

خدا آپ کو برکت دیتا ہے

فتاوی جات / الحديث / حدیث: ٹخنوں سے نیچے شلوار رکھے ہوئے آدمی کی نمازقابلِ قبول نہیں ہوتی

اس پیراگراف کا اشتراک کریں WhatsApp Messenger LinkedIn Facebook Twitter Pinterest AddThis

تاریخ شائع کریں:2017-01-15 11:28 AM | مناظر:1951
- Aa +

ایک خبرِ منقول میں آیا ہے جس کی صحت کا مجھے علم نہیں ہے کہ ’’ٹخنوں سے نیچے شلوار رکھے ہوئے آدمی کی نماز اللہ تعالیٰ کے ہاں قابلِ قبول نہیں ہوتی‘‘ اس کی صحت کیا ہے ؟

حديث لا يقبل صلاة رجل مسبل

جواب

حامداََ و مصلیاََ۔۔۔

اما بعد۔۔۔

اللہ کی توفیق سے ہم آپ کے سوال کا جواب یہ دیتے ہیں:

اس حدیث کو امام ابود اؤد وغیرہ نے (۶۳۸) میں حضرت ابوجعفر اور عطاء بن یسار رحمہما اللہ کے طریق سے حضرت ابو ہریرہؓ سے روایت کی ہے اور اس کے بارے میں امام نوویؒ نے فرمایاہے کہ اس حدیث کی سندا امام مسلمؒ کی شرط کے مطابق صحیح ہے اور امام منذریؒ نے اس کو معلول قرار دیتے ہوئے فرمایا ہے کہ اہلِ مدینہ میں سے ابوجعفر معروف نہیں ہیں.


آپ چاہیں گے

ملاحظہ شدہ موضوعات

1.

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں