×
العربية english francais русский Deutsch فارسى اندونيسي اردو

خدا کی سلام، رحمت اور برکتیں.

پیارے اراکین! آج فتوے حاصل کرنے کے قورم مکمل ہو چکا ہے.

کل، خدا تعجب، 6 بجے، نئے فتوے موصول ہوں گے.

آپ فاٹاوا سیکشن تلاش کرسکتے ہیں جو آپ جواب دینا چاہتے ہیں یا براہ راست رابطہ کریں

شیخ ڈاکٹر خالد الاسلام پر اس نمبر پر 00966505147004

10 بجے سے 1 بجے

خدا آپ کو برکت دیتا ہے

فتاوی جات / ​زکوٰۃ / ماہانہ قسطوں میں زکوٰۃ ادا کرنے کاحکم

اس پیراگراف کا اشتراک کریں WhatsApp Messenger LinkedIn Facebook Twitter Pinterest AddThis

تاریخ شائع کریں:2017-05-18 01:15 PM | مناظر:2446
- Aa +

ماہانہ قسطوں میں زکوٰۃ اداکرنے کا کیا حکم ہے؟

إخراج الزكاة على دفعات شهرية

جواب

حمد و ثناء کے بعد۔۔۔

بتوفیقِ الٰہی آپ کے سوال کا جواب پیشِ خدمت ہے:

اس مسئلہ میں دو اقوال ہیں:

 پہلا قول: جمہور علماء کے نزدیک اس طرح زکوٰۃ نکالنا جائز نہیں ہے ، بلکہ فوراََ زکوٰۃ نکالنا واجب ہے ، تاہم انہوں نے دن آدھے دن کی تاخیر میں اجازت دی ہے ۔

دوسرا قول: انصاف میں امام احمدؒ کے نزدیک تاخیر اور قسطوں میں زکوٰۃ ادا کرنا جائز ہے بایں صورت کہ اپنے رشتہ دار کو ہر ماہ زکوٰۃ دے ۔

اور دوسرا قول کافی زیرِ غور ہے یعنی ضرورت اور مصلحت کے پیشِ نظر تاخیر جائز ہے اور اس میں ارشاد باری تعالیٰ سے بھی استدلال کیا جاسکتا ہے: ﴿اور بے وقوفوں کو اپنے اموال نہ دیا کرو﴾ {النسااء: ۵

اور جمہور کے قول کے ساتھ پرامن و مرتب مخرج کسی فقیر کی وکالت یا اخراج میں جلدی کرنا ہے بایں صورت کہ کسی فقیر کو تنخواہوں کی شکل میں ہر ماہ آئندہ سال کے لئے اپنی زکوٰۃ دے دے


آپ چاہیں گے

ملاحظہ شدہ موضوعات

1.

×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں