×
العربية english francais русский Deutsch فارسى اندونيسي اردو

خدا کی سلام، رحمت اور برکتیں.

پیارے اراکین! آج فتوے حاصل کرنے کے قورم مکمل ہو چکا ہے.

کل، خدا تعجب، 6 بجے، نئے فتوے موصول ہوں گے.

آپ فاٹاوا سیکشن تلاش کرسکتے ہیں جو آپ جواب دینا چاہتے ہیں یا براہ راست رابطہ کریں

شیخ ڈاکٹر خالد الاسلام پر اس نمبر پر 00966505147004

10 بجے سے 1 بجے

خدا آپ کو برکت دیتا ہے

فتاوی جات / نکاح / باپ کی خالہ کے گھر جانے کا کیا حکم ہے ؟

اس پیراگراف کا اشتراک کریں WhatsApp Messenger LinkedIn Facebook Twitter Pinterest AddThis

تاریخ شائع کریں:2016-10-17 06:42 PM | مناظر:2519
- Aa +

سوال

باپ کی خالہ کے گھر جانے کا کیا حکم ہے ؟

ما حكم الدخول على خالة أبي؟

جواب

حامداََ ومصلیاََ۔۔۔

امابعد۔۔۔

باپ کی خالہ محرموں میں سے ہے جیسا کہ سورۂ نساء میں اللہ کا ارشاد پاک ہے  :  (ترجمہ)  ’’تم پر تمہاری مائیں اور بیٹیاں اور بہنیں اور پھوپھیاں اور خالائیں حرام ہیں ‘‘۔ اور یہ انسان کی ہر خالہ کو شامل ہے چاہے وہ اس کی اپنی خالہ ہو یا والدین کی سب برابر ہیں۔

آپ کا بھائی

خالد المصلح

17/02/1425هـ


ملاحظہ شدہ موضوعات

1.
×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں