×
العربية english francais русский Deutsch فارسى اندونيسي اردو

خدا کی سلام، رحمت اور برکتیں.

پیارے اراکین! آج فتوے حاصل کرنے کے قورم مکمل ہو چکا ہے.

کل، خدا تعجب، 6 بجے، نئے فتوے موصول ہوں گے.

آپ فاٹاوا سیکشن تلاش کرسکتے ہیں جو آپ جواب دینا چاہتے ہیں یا براہ راست رابطہ کریں

شیخ ڈاکٹر خالد الاسلام پر اس نمبر پر 00966505147004

10 بجے سے 1 بجے

خدا آپ کو برکت دیتا ہے

فتاوی جات / البيوع / اس نے میرا ڈیوائس خراب کر دیا ہے ، کیا اس کے ذمہ میرا حق باقی رہتا ہے؟

اس پیراگراف کا اشتراک کریں WhatsApp Messenger LinkedIn Facebook Twitter Pinterest AddThis

مناظر:1176
- Aa +

سوال

اگر کوئی بغیر قصد وارادہ کے میرا ڈیوائس خراب کردے بایں طور کہ اس کے ہاتھ سے چھوٹ کرٹوٹ جائے یا کسی اونچی بلڈنگ سے گر جائے اور مجھ سے کہے کہ میں نے اسے نہیں دیکھا تھا لیکن مجھے ایسا محسوس ہوا کہ ایسا یا تو جلد بازی کی وجہ سے اس سے ہوا یا پھر بے پرواہی اور لا ابالی پن کی وجہ سے ، چونکہ یہ ڈیوائس بے حد مہنگا ہے اور یہ اب درست ہونے کے بھی قابل نہیں ہے تو کیا اس کے ذمہ میرا حق باقی رہتا ہے؟

أفسد جهازي فهل لي حق عنده؟

جواب

حمد و ثناء کے بعد۔۔۔

اگر اس ڈیوائس کے ہلاک ہونے میں اس شخص کی تفریط یا تعدی شامل ہو تو پھر اس پر اس ڈیوائس کا ہرجانہ بھرنا واجب ہے، تفریط سے مراد مال کی حفاظت نہ کرنا ہے اور تعدی مال میں ناجائز فعل کا نام ہے۔

آپ کا بھائی/

خالد المصلح

10/02/1425هـ


ملاحظہ شدہ موضوعات

1.
×

کیا آپ واقعی ان اشیاء کو حذف کرنا چاہتے ہیں جو آپ نے ملاحظہ کیا ہے؟

ہاں، حذف کریں